Advertisement
Advertisement
Advertisement
Advertisement

آزادی مارچ کیس میں بانی پی ٹی آئی سمیت دیگر رہنما بری

Now Reading:

آزادی مارچ کیس میں بانی پی ٹی آئی سمیت دیگر رہنما بری

آزادی مارچ کیس میں بانی پی ٹی آئی سمیت دیگر رہنما بری

اسلام آباد: ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز کورٹ نے آزادی مارچ کیس میں سابق وزیراعظم و بانی پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) سمیت دیگر رہنماؤں کو بری کردیا۔

جوڈیشل مجسٹریٹ مرید عباس خان نے بانی پی ٹی آئی، شیخ رشید، فیصل جاوید، علی نواز اعوان، شاہ محمود قریشی، قاسم سوری، راجہ خرم نواز، زرتاج گل اور اسد عمر کی بریت کی درخواستوں پر محفوظ شدہ فیصلہ سنا دیا۔

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز کورٹ میں آزادی مارچ پر تھانہ کراچی کمپنی میں درج مقدمات میں بانی پی ٹی آئی اور دیگر رہنماؤں کی بریت کی درخواستوں پر سماعت ہوئی۔

وکیل نعیم پنجوتھہ، سردار مصروف اور آمنہ علی عدالت میں پیش ہوئے اور بریت کی درخواستوں پر دلائل دیے۔

اس موقع پر اسد عمر، سیف اللہ نیازی عدالت میں پیش ہوئے جبکہ فیصل جاوید اور زرتاج گل کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست دائر کی گئی۔

Advertisement

وکیل نعیم پنجوتھہ نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ بانی پی ٹی آئی پر 109 کا الزام ہے کہ ان کی ایما پر ہوا، مقدمہ درج کرنے کی اتھارٹی صرف اس کے پاس ہے جس نے دفعہ 144 نافذ کی، غیر مجاز شخص کی جانب سے ایف آئی آر درج کروائی گئی، جس ایف آئی آر کی بنیاد ہی غلط ہو وہ مقدمہ آگے کیسے چل سکتا ہے۔

انکا کہنا تھا کہ کوئی ویڈیو شواہد بھی بانی پی ٹی آئی کی حد تک پیش نہیں کیئے جاسکے، پرامن احتجاج پر بھی ایف آئی آر درج کی گئیں۔

وکیل نے بتایا کہ بانی پی ٹی آئی کے خلاف ایک ہی نوعیت کے مختلف تھانوں میں انیس مقدمات درج ہیں، اسی نوعیت کے مقدمات میں عدالتوں نے بانی پی ٹی آئی آئی کو بریت دی ہے، جو الزامات لگائے گئے اگر وہ بےبنیاد ہوں تو عدالت ملزمان کو بری کر سکتی ہے۔

نعیم پنجوتھہ نے مزید کہا کہ بانی پی ٹی آئی کے خلاف مقدمات سیاسی انتقام کا نشانہ بنانے کیلئے تھے، بانی پی ٹی آئی کی کال پر پرامن احتجاج کیا گیا تھا، شیلنگ کی وجہ سے درختوں کو آگ لگی کسی ورکر نے کوئی آگ نہیں لگائی۔

دوسری جانب وکیل سردار مصروف نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ غیر مجاز افراد کی جانب سے ایف آئی آر کا اندراج قانون کے خلاف ہے،خلاف قانون ایف آئی آر پر کیس نہیں چلایا جاسکتا اسلام آباد ہائیکورٹ کا آڈر بھی موجود ہے، بانی پی ٹی آئی اور دیگر ملزمان کو عدالت باعزت بری کرے۔

عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔

Advertisement

بعد ازاں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے بانی پی ٹی آئی، فیصل جاوید، علی نواز اعوان، سیف اللہ نیازی، زرتاج گل اور اسد عمر کو بری کردیا۔

Advertisement
Advertisement
مزید پڑھیں

Catch all the Business News, Breaking News Event and Latest News Updates on The BOL News


Download The BOL News App to get the Daily News Update & Live News


Advertisement
آرٹیکل کا اختتام
مزید پڑھیں
عسکری ٹاورحملہ اور جلاؤ گھیراؤ کیس جیل ٹرائل کی سماعت 13 جون تک ملتوی
مونال سمیت نیشنل پارک میں قائم تمام ریسٹورنٹ بند کرنے کا حکم
انسانی اسمگلنگ کیس: صارم برنی کی درخواست ضمانت مسترد
الیکشن ٹربیونل کیوں تبدیل کیا، الیکشن کمیشن کو جوابدہ ہونا ہے، اسلام آباد ہائیکورٹ
ہوسکتا ہے جج کی عدت نکاح کیس سے الگ ہونے کی وجہ درست نہ ہو، اسلام آباد ہائیکورٹ
پنجاب ہتک عزت قانون کے 3 سیکشنز پر عملدرآمد عدالتی فیصلے سے مشروط
Advertisement
توجہ کا مرکز میں پاکستان سے مقبول انٹرٹینمنٹ
Advertisement

اگلی خبر