Advertisement
Advertisement
Advertisement
Advertisement

لیجنڈری اداکار طلعت حسین کی زندگی پر ایک نظر!

Now Reading:

لیجنڈری اداکار طلعت حسین کی زندگی پر ایک نظر!

لیجنڈری اداکار طلعت حسین کی زندگی پر ایک نظر!

پاکستان شوبز انڈسٹری کے معروف و سینئر اداکار طلعت حسین طویل علالت کے بعد آج انتقال کرگئے، آئیے اُن کی زندگی پر ایک نظر ڈالتے ہیں۔

طلعت حسین کا شمار پاکستان کے ان لیجنڈ فنکاروں میں ہوتا ہے، جنہوں نے فن کی تمام اصناف میں کام کیا اور اپنا لوہا منوایا، تلفظ اور تاثرات کے ماہر طلعت حسین پاکستان میں فنون لطیفہ کے چمکتے ستارے تھے۔

انہوں نے پاکستان ٹیلی ویژن انڈسٹری کو اپنی منفرد انداز اداکاری سے دوام بخشا، فلم، ٹی وی، اسٹیج اور ریڈیو پر اپنے فن اداکاری اور صداکاری سے نئے آنے والے اداکاروں کے لیے گہرے نقش چھوڑے جو آج بھی ان کے لیے اکیڈمی کا درجہ رکھتے ہیں۔

طلعت حسین وارثی قیام پاکستان سے قبل 1940 میں غیر منقسم ہندوستان کے شہر دہلی میں پیدا ہوئے، ان کا تعلق ایک روشن خیال اور پڑھے لکھے گھرانے سے تھا۔

ان کے والدین الطاف حسین وارثی اور شائستہ بیگم ریڈیو کی جانی پہچانی آواز تھے، یہ خاندان قیام پاکستان کے بعد کراچی آیا، طلعت حسین کی شادی جامعہ کراچی کی پروفیسر رخشدہ حسین سے ہوئی تھی۔

Advertisement

اُن کو شروع سے ہی فلموں اور ڈراموں میں کام کرنے کا شوق تھا، انہوں نے اپنے فنی سفر کا آغاز 1964 میں ریڈیو پاکستان پر بطور نیوز کاسٹر سے کیا اور پاکستان ٹیلیویژن پر کام کا آغاز 1967 سے کیا۔

طلعت حسین نے اداکاری کی باقاعدہ تربیت برطانیہ سے حاصل کی، اس کے لیے وہ 1972 سے1977 تک لندن میں مقیم رہے اور لندن اکیڈمی آف میوزک اینڈ ڈرامیٹک آرٹ سے اداکاری کے شعبے میں گولڈ میڈل بھی حاصل کیا۔

انہوں نے لندن چینل فور کی مشہور زمانہ سیریز ’ٹریفک‘ میں لاجواب اداکاری کی۔ اس کے علاوہ طلعت حسین نے بالی ووڈ میں فلم ’سوتن کی بیٹی‘ میں عمدہ پرفارمنس دی۔

اس فلم میں جیتندر اور ریکھا کے مدِمقابل ان کی اداکاری کو بے حد پسند کیا گیا۔ انہوں نے ترکش اور دیگر ممالک کی فلموں میں بھی اداکاری کی۔

ان کے مشہور زمانہ ڈراموں میں طارق بن زیاد، بندش، دیس پردیس، ارجمند، کارواں، انا، مہرالنسا، ریاست، درد کا شجر، ڈولی آنٹی کا ڈریم ولا، عید کا جوڑا، فنون لطیفہ، ہوائیں، اک نئے موڑ پہ، پرچھائیاں، دی کاسل، ایک امید، ٹائپسٹ، انسان اورآدمی، رابطہ، نائٹ کانسٹیبل، درد کا شجر اور کشکول نمایاں ہیں۔

طلعت حسین نے ڈراموں کے ساتھ فلموں میں بھی اداکاری کے جوہر دکھائے، ان کی مشہور فلموں میں چراغ جلتا رہا، گمنام، ایک سے بڑھ کر ایک، اشارہ، انسان اور آدمی، محبت مر نہیں سکتی، لاج، قربانی، کامیابی، بندش، پروجیکٹ غازی، بانی پاکستان کی زندگی پر بنائی گئی فلم جناح سمیت دیگر شامل ہیں۔

Advertisement

طلعت حسین نے اداکاری، صداکاری، آرٹ اور فن کیلیے اپنی عمر کا ایک بڑا حصہ وقف کیا۔

طلعت حسین کو ان کے فنی خدمات کے اعتراف میں حکومت کی پاکستان کی جانب سے 1982 میں پرائڈ آف پرفارمنس اور 2021 میں  ستارہ امتیاز سے نوازا گیا۔

1985 میں انہیں فلم گمنام میں ناقابل فراموش اداکاری پر نیشنل ایوارڈ دیا گیا۔ اس کے علاوہ انہوں نے نگار ایوارڈ سمیت کئی دیگر ایوارڈ بھی حاصل کر رکھے تھے۔

Advertisement
Advertisement
مزید پڑھیں

Catch all the Business News, Breaking News Event and Latest News Updates on The BOL News


Download The BOL News App to get the Daily News Update & Live News


Advertisement
آرٹیکل کا اختتام
مزید پڑھیں
عالیہ بھٹ نے اہم سنگِ میل عبور کرلیا
حج پر جاتے وقت ویڈیوز اور تصاویر شیئر کرنا اچھا عمل نہیں، سنیتا مارشل
معروف پاکستانی یوٹیوبر پر قاتلانہ حملہ
معروف اداکار ظاہر شاہ کو مداحوں سے بچھڑے 7 سال بیت گئے
شہنشاہِ غزل مہدی حسن کی 12 ویں برسی آج منائی جارہی ہے
سوناکشی سنہا خود کی شادی سے متعلق سوال کرنے والوں پر برس پڑیں!
Advertisement
توجہ کا مرکز میں پاکستان سے مقبول انٹرٹینمنٹ
Advertisement

اگلی خبر