عام آدمی کا مثالی بلڈشوگر لیول کتنا ہوتا ہے؟

ویب ڈیسکویب ایڈیٹر

31st May, 2021. 03:16 pm

ذیابیطس جسے عام اصطلاح میں شوگر کہا جاتا ہے، اس کا اثر جسم کے کئی حصوں پر ہوسکتا ہے اور اسکی دوسری قسم بہت خطرناک ہوتی ہے۔

ماہرین کے مطابق شوگر کے متعلق بروقت معلوم نہیں ہوسکے تو یہ بینائی سے محرومی سے لے کر گردوں کے فیل ہونے اور دیگر طبی مسائل کا سبب بنتی ہے۔

اسکے برعکس عام آدمی کا نارمل بلڈشوگر لیول بھی ہوتا ہے جس کے کم یا زیادہ ہونے سے انسان شوگر یا ذیابطس کی بیماری کا شکار ہوتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ ایک صحت مند فرد کا کھانے سے پہلے شوگر لیول 100 ایم جی/ڈی ایل اور کھانے کے بعد 70 سے 140 ایم جی/ ڈی ایل سے کم ہونا چاہیے۔

عام آدمی کے بلڈ شوگر کی سطح میں دن بھر کے دوران  کمی بیشی آتی ہے۔

Adsense 300×250