کووِڈ سے صحتیابی کے بعد دوبارہ وائرس لگنے کا خطرہ بہت کم ہوجاتا ہے: تحقیق

Mehdi Qazi

29th Nov, 2021. 10:59 pm

ایک نئی تحقیق کے مطابق کورونا وائرس کا شکار ہونے اور صح یابی کے بعد دوبارہ وائرس لگنے کا خطرہ بہت کم ہوجاتا ہے۔

خلیجی ریاست قطر میں ہونے والی طبی تحقیق کے مطابق عالمی کورونا وباء کو شکست دینے کے بعد دوبارہ اس وائرس کی منتقلی کا خطرہ کافی حد تک ٹل جاتا ہے۔ پھر بھی اگر کووڈ 19 سے دوسری بار بیمار ہوجائیں تواسپتال میں داخلے یا موت کا امکان پہلی بار کی بیماری کے مقابلے میں 90 فیصد تک کم ہوتا ہے۔

مذکورہ بالا نتیجہ 3 لاکھ 53 ہزار سے زائد یہ کورونا سے متاثر ہونے والے افراد پر تحقیق کر کے نکالا گیا۔

ماہرین نے فروری 2020 سے اپریل 2021 کے دوران کووڈ سے متاثر ہونے والے افراد کے ریکارڈز کا موازنہ کیا۔

تحقیق کے دوران محققین نے ویکسین شدہ افراد کو ہٹا دیا جبکہ باقی بج جانے والے افراد میں 1304 ری انفیکشن کیسز سامنے آئے، دوبارہ بیماری میں اوسطاً 9 ماہ کا وقفہ ریکارڈ کیا گیا۔دوسری بار کورونا سے متاثر ہونے والے محض 4 افراد کو زیادہ بیمار ہونے پر اسپتال میں داخل کرایا گیا جبکہ کوئی بھی فرد اتنا بیمار نہیں ہوا کہ اسے آئی سی یو میں داخل کرایا جاتا۔

تحقیق میں یہ بھی دیکھا گیا کہ پہلی بار بیمار ہونے پر 28 مریضوں کی حالت نازک قرار دی گئی اور انہیں آئی سی یو میں داخل کرایا گیا تھا جبکہ ری انفیکشن گروپ میں کوئی ہلاک نہیں ہوا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اتنے لوگوں میں صرف تیرہ سو ری انفیکشنز کیسز رپورٹ ہونا اور محض 4 کیسز میں بیماری کی شدت کا دیکھا جانا حیران کن ہے، تمام مریض ایلفا اور بیٹا کورونا اقسام کے تھے اس میں ڈیلٹا شامل نہیں تھا۔

اس سے قبل سابقہ تحقیقی رپورٹس میں بھی یہ بات سامنے آئی تھی کہ بیماری سے بننے والی قدرتی مدافعت دوبارہ بیماری کا خطرہ کم کرتی ہے۔

خیال رہے کہ قطر میں ہونے والی تحقیق کے نتائج طبی جریدے نیو انگلینڈ جرنل آف میڈیسین میں شائع ہوئے ہیں۔

Square Adsence 300X250