Advertisement
Advertisement
Advertisement
Advertisement

سی سیکشن کے ذریعے جنم لینے بچے خسرہ کے لیے کم قوت مدافعت رکھتے ہیں، تحقیق

Now Reading:

سی سیکشن کے ذریعے جنم لینے بچے خسرہ کے لیے کم قوت مدافعت رکھتے ہیں، تحقیق
سی سیکشن کے ذریعے جنم لینے بچے خسرہ کے لیے کم قوت مدافعت رکھتے ہیں، تحقیق

سی سیکشن کے ذریعے جنم لینے بچے خسرہ کے لیے کم قوت مدافعت رکھتے ہیں، تحقیق

ایک نئی تحقیق کے مطابق سی سیکشن کے ذریعے پیدا ہونے والے بچوں کو اینٹی باڈیز بنانے کے لیے خسرہ کی دو ویکسین کی ضرورت ہوتی ہے۔ کیو نکہ ان بچوں میں خسرہ کی ایک ویکسین تحفظ فراہم نہیں کر پاتی۔

نارمل پیدا ہونے والے بچوں کے مقابلے میں سی سیکشن سے جنم لینے بچوں میں خسرہ کی ایک ویکسین کے مکمل طور پر غیر موثر ہونے کا امکان 2.6 گنا زیادہ ہوتا ہے کیونکہ ان کا مدافعتی نظام خسرہ کے انفیکشن سے لڑنے کے لیے اینٹی باڈیز پیدا  نہیں کرپاتا، تاہم ویکسین کی دوسری خوارک مضبوط قوت مدافعت پیدا کرتی ہے۔

اس تحقیق کے اہم مصنف سینئر ہنرک سالجے جو کہ برطانیہ میں کیمبرج یونیورسٹی میں جینیات کے لیکچرار  ہیں کا کہنا ہے کہ اس تحقیق میں ہم نے دریافت کیا کہ جس طرح سے ہم پیدا ہوتے ہیں اس سے بڑے ہونے کے ساتھ ساتھ بیماریوں کے خلاف ہماری قوت مدافعت پر طویل مدتی اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

اس تحقیق کے لیے محققین نے چین کے شہر ہنان میں 1500 سے زائد بچوں کا ڈیٹا استعمال کیا، جس میں پیدائش سے لے کر 12 سال کی عمر تک کے تمام بچوں کے ہر چند ہفتوں کے بعد خون کے نمونے لیے گئے تھے۔

نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ سی سیکشن کے ذریعے پیدا ہونے والے تقریباً 12 فیصد بچوں میں خسرہ کے پہلے حملے کے خلاف کوئی مدافعتی ردعمل نہیں دیکھا گیا، تاہم اس کے مقابلے میں نارمل پیدا ہونے والے بچوں میں یہی تناسب  5 فیصد تھا۔

Advertisement

محققین کو شک ہے کہ سی سیکشن کے بچوں میں ناکامی کی شرح ان کے آنتوں کے جرثوموں میں فرق کی وجہ سے ہے۔ نارمل پیدائش میں ماں سے بچے میں جرثوموں کی ایک بڑی قسم منتقل ہوتی ہے جو مدافعتی نظام کی حفاظت کر سکتی ہے۔

سالجے کا کہنا ہے کہ سی سیکشن کی پیدائش کے ساتھ، بچے ماں کے مائیکرو بایوم سے اس طرح سے متاثر نہیں ہوتے جس طرح نارمل پیدائش میں ہوتے ہیں اسی لیے یہ بچے اپنے گٹ مائیکرو بایوم کو تیار کرنے میں زیادہ وقت لیتے ہیں اور خسرہ سمیت بیماریوں کے خلاف ویکسین کے ذریعے مدافعتی نظام کی صلاحیت کو بڑھایا جاسکتا ہے۔

یہی وجہ تھی کہ بہت سے سی سیکشن بچوں کو ان کی پہلی ویکسینیشن کے بعد خسرہ سے تحفظ حاصل نہیں ہوتا ہے انہیں اس مرض کے خلاف قوت مدافعت بڑھانے کے لیے خسرہ کی دو خوراکوں کی ضرورت ہوتی ہے ۔

Advertisement
Advertisement
مزید پڑھیں

Catch all the Business News, Breaking News Event and Latest News Updates on The BOL News


Download The BOL News App to get the Daily News Update & Live News


Advertisement
آرٹیکل کا اختتام
مزید پڑھیں
چقندر کا جوس پینے کا یہ فائدہ آپکو ضرور پسند آئے گا
قبل از وقت موت سے بچنا چاہتے ہیں تو اِن غذاؤں کا استعمال کریں!
موٹاپے کی ایک اور اہم وجہ سامنے آ گئی
آموں کو کھانے سے قبل دھونا کیوں چاہیے؟
کوئٹہ ایڈز کے حوالے سے ہائی رسک علاقہ قرار
انرجی ڈرنکس پینے والوں کے لئے بُری خبر
Advertisement
توجہ کا مرکز میں پاکستان سے مقبول انٹرٹینمنٹ
Advertisement

اگلی خبر