سابق صدر آصف علی زرداری جلسہ گاہ پہنچ گئے

Tanzeela qureshi

17th Oct, 2021. 09:04 pm

سابق صدر آصف علی زرداری باغِ جناح جلسہ گاہ پہنچ گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سابق صدر آصف علی زرداری نے کراچی میں کامیاب جلسہ کرنے پر جیالوں کو سلام پیش کیا اور جلسے میں شرکت پر اہلِ کراچی کا شکریہ بھی ادا کیا۔

 آصف علی زرداری کی جانب سے شاندار اجتماع میں کار ساز کے شہداء کو شاندار خراج عقیدت پیش کیا گیا۔

سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے عوام سے جو وعدے کیئے وہ پورے کیئے جائیں گے۔

یاد رہے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے باغ جناح جلسہ گاہ میں جیالوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان چور ہے، میں پاکستان کی عوام سے پوچھتا ہوں کہ کیا آج تک دنیا کی تاریخ میں ایسی بہادر بیٹی پیدا ہوئی جس کو بتایا جائے کہ آپ کو ایک آمر اور دہشت گرد قتل کرنا چاہتے ہیں لیکن آپ پھر بھی اس ملک اور عوام کو آمر سے آزادی دلانے کے لیے وطن آئیں، اس ملک میں الیکشن لڑنے کے لیے عوام کی خاطر آئیں؟

چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ بی بی باہر سے بیٹھ کر الیکشن مہم چلا سکتی تھیں لیکن دھمکیوں کے باوجود بینظیر بھٹو زرداری آمر اور دہشتگردوں کی پروا کیے بغیر 18 اکتوںر کو وطن واپس آئیں۔ ہمیں پہلے سے معلوم تھا آپ پھانسی سے نہیں ڈرتیں، سانحہ کارساز پر دھماکہ ہوا تو جیالے بھاگنے کے بجائے اپنی قائد بینظیر بھٹو کو بچانے کے لیے آگے بڑھے۔ یہ عظیم مثال دنیا میں نہیں ملتی۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ قائد عوام ذوالفقار علی بھٹو اور بینظیر بھٹو نے ملک کو معاشی ترقی دلائی۔ بی بی عوام کے روزگار کی امید تھیں۔

بلاول بھٹو نے یہ بھی کہا کہ کسان محنت سے اپنی فصل اگاتا ہے، پیپلز پارٹی نے ہی کسان مزدور کو اپنا مقام دلایا۔ پیپلز پارٹی نے روٹی کپڑا مکان کا نعرہ لگایا اور شہید بینظیر بھٹو نے نعرہ پورا کیا۔ شہید بینظیر بھٹو کے لیے یہی کہا جاتا ہے کہ بینظیر آئیں گی روزگاز لائیں گی۔

ان کا کہنا تھا کہ آج تاریخی بیروزگاری ہے، آج تاریخی مہنگائی ہے۔ آج بھی ملک کو پیپلز پارٹی کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج کی حکومت عوام سے دھوکا کرتی ہے۔ ایک کروڑ نوکریوں کا وعدہ کیا تھا اس حکومت نے۔ کہاں گئی وہ نوکریاں اور 50 لاکھ گھر کہا ہیں؟ انہوں نے اپنے ہزاروں لوگوں سے روزگار چھینا ہے۔ مہنگائی ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر ہے۔ عمران خان چور ہے۔ ہماری حکومت آئی تو عوام کو روزگار دلائیں گے، ہم چھت دیں گے گرائیں گے نہیں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی حکومت عام آدمی، مزدور، کسانوں اور سفید پوش لوگوں کی ہوتی ہے۔

چیئرمین پی پی پی کا کہنا تھا کہ عوام اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرے گی۔ پیپلز پارٹی کی حکومت جلد آ رہی ہے۔ ہماری حکومت آئی تو ہم سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پینشن میں پہلے ہی دن میں اضافہ کریں گے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ عمران خان کو بھگانے تک ہم احتجاج جاری رکھیں گے۔ عمران خان نے جہاں ہاتھ لگایا ہے تباہی آئی ہے، جس کو یہ تبدیلی کہتے ہیں اصل میں وہ تباہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اسٹیل مل ملازمین کو نکال دیا اور آپ نے اسٹیل مل ملازمین کا معاشی قتل کیا ہے۔ حکومت نے 16 ہزار ملازمین کو بیروزگار کر دیا ہے۔ یہ بھی تبدیلی نہیں تباہی ہے۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ عمران خان جوڈیشری کو اپنا  ٹائیگر فورس بنانا چاہتا ہے۔ عمران خان الیکشن کمیشن اور پنجاب پولیس کو بھی ٹائگر فورس بنانے کی کوشش کر رہا ہے۔ عمران خان میڈیا اور سوشل میڈیا کو ٹائگر فورس بنانا چاہتا ہے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ عمران خان کو وارننگ دیتا ہوں، عمران خان تمہاری الٹی گنتی شروع ہو چکی ہے۔

بلاول بھٹو زرداری نے اجلاس میں اعلان کیا کہ اس سال پیپلز پارٹی کا 30 نومبر کو یوم تاسیس خیبر پختونخوا میں منائیں گے۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ آصف زرداری  نیب کیسز کا سامنا کر رہے ہیں اور خورشید شاہ دو سال سے نیب کی قید میں ہیں۔

چیئرمین پیپلز پارٹی کا اجلاس میں مزید کہنا تھا کہ قائد اعظم محمد علی جناح سے وعدہ کرتا ہوں کہ ملک میں ان کا دیا ہوا قانون نافذ کروں گا اور ملک کو ترقی دلائوں گا۔

Square Adsence 300X250