Advertisement
Advertisement
Advertisement
Advertisement

امریکی صحافی کرسٹینا گولڈ بم نے پاکستانی اسٹریٹ پرفارمرز کی زندگیاں داؤ پر لگا دیں

Now Reading:

امریکی صحافی کرسٹینا گولڈ بم نے پاکستانی اسٹریٹ پرفارمرز کی زندگیاں داؤ پر لگا دیں

امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کی صحافی کرسٹینا گولڈ ہم نے پاکستانی اسٹریٹ پرفارمرز کی زندگیاں مشکل میں ڈال دی ہیں۔

امریکی خاتون صحافی کرسٹینا گولڈ ہم نے نیویارک ٹائمز میں متعصبانہ لفظوں کا استعمال کرتے ہوئے لکھا کہ پاکستانی اسٹریٹ پرفارمرز دراصل خفیہ ایجنسی کے آلہ کار ہیں۔

کرسٹینا گولڈ ہم نے اپنے مضمون میں صحافتی روایات کی پاسداری کو ایک طرف رکھتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی سڑکوں پر گھومنے والے گداگر، کچرا اٹھانے والے اور اسٹریٹ پرفارمر بظاہر سڑکوں پر بھیک مانگ رہے ہیں لیکن اصل میں وہ پاکستانی خفیہ ایجنسی کے لیے کام کرتے ہیں۔

نیویارک ٹائمز میں شائع ہونے والے اس مضمون کی لکھاری کرسٹینا گولڈ ہم نے امریکہ اور یورپ کی سڑکوں پر پرفارم کر کے راہ گیروں سے مالی مدد مانگنے والے اسٹریٹ پرفارمرز کو چھوڑ کر پاکستان کے معروف اسٹریٹ پرفارمر ’گولڈن مین‘ کو ہدف تنقید کا نشانہ بنایا۔

یاد رہے کہ اسلام آباد میں ’گولڈن مین‘ کے نام سے اسٹریٹ پرفارمر کا تعلق صوبہ سندھ سے ہے جو سڑک پر ایک ساکت مجسمے کی طرح اپنی پرفارمنس دیتا ہے۔

Advertisement

گولڈن مین نامی یہ اسٹریٹ پرفارمر اسلام آباد کے شہریوں خاص طور پربچوں کے دلوں میں گھر کر چکا ہے، شہری اپنے بچوں کے ہمراہ گولڈن مین کے پاس جاتے ہیں اس کے ساتھ تصویریں بنواتے ہیں اور کچھ پیسے دے کر چلے جاتے ہیں۔

اسلام آباد کے گولڈن مین کی گزر بسر شہریوں کے دیئے جانے والے پیسوں سے ہی ہوتی ہے۔

یاد رہے کہ کرسٹینا گولڈ ہم امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کی پاکستان اور افغانستان میں بیورو چیف بھی ہیں۔

حیرانگی اس بات کی ہے کہ کرسٹینا گولڈ ہم کے قلم نے یورپ اور امریکہ کے ان ہزاروں اسٹریٹ پرفارمرز کے خلاف کبھی کوئی تحریر نہیں لکھی اور نہ ہی انہیں ان ممالک کی خفیہ ایجنسیوں کا آلہ کار بتایا۔

کرسٹینا نے اپنے مضمون میں لکھا کہ پاکستان کی سڑکوں پر گولڈن مین جیسے اسٹریٹ پرفارمر اداکار ہیں جو خفیہ ایجنسی کے مخبر ہیں، یہ لوگ بظاہر اسٹریٹ پرفارمر ہیں مگر ان کا اصل کام سیاست دانوں اور دیگر شہریوں پر نظر رکھنا ہے۔

کرسٹینا گولڈ ہم کے نیویارک ٹائمز میں شائع ہونے والے اس کالم کی وجہ سے پاکستانی اسٹریٹ پرفارمرز کی زندگیاں خطرے میں پڑ چکی ہیں۔

Advertisement

ملک دشمن عناصر اس آرٹیکل کی بنیاد پر انہیں نشانہ بنا سکتے ہیں، گولڈن مین جیسے ان غریب اسٹریٹ پرفارمرز کو کوئی بھی دہشت گرد آئی ایس آئی کا ایجنٹ قرار دے کر ان کی جان لے سکتا ہے۔

ایسی صورت میں ان غریب اسٹریٹ پرفارمرز کا خون کرسٹینا گولڈ ہم اور نیویارک ٹائمز کے سر ہو گا۔

ان غریب پرفارمرز کو اگر کوئی دہشتگرد آئی ایس آئی کا ایجنٹ سمجھ کر مار ڈالے تو اس کا خون کرسٹینا گولڈ بام اور نیویارک ٹائمز کے سر ہوگا۔

کرسٹینا گولڈ بام اور نیویارک ٹائمز کا یہ منافقت اور ڈبل اسٹینڈرڈ سے بھرا ہوا اقدام قابلِ نفرت ہے جس کی ہر جگہ ہر ممکن حد تک مذمت کی جانی چاہئیے۔

Advertisement
Advertisement
مزید پڑھیں

Catch all the Business News, Breaking News Event and Latest News Updates on The BOL News


Download The BOL News App to get the Daily News Update & Live News


Advertisement
آرٹیکل کا اختتام
مزید پڑھیں
آرمینیا نے بھی فلسطین کو آزاد ریاست تسلیم کرلیا
امریکا کیلئے پاکستان اور بھارت سے تعلقات اہمیت کے حامل ہیں، میتھیو ملر
سعودی عرب سے ایک اور بڑی خوشخبری سامنے آ گئی
رومانیہ یوکرین کو پیٹریاٹ میزائل سسٹم بھیجے گا
اسپین جانے والے 68 تارکین وطن کو کروز شپ نے بچا لیا
سعودی حکام کی جانب سے غیر ملکی عازمین حج میں تحائف تقسیم
Advertisement
توجہ کا مرکز میں پاکستان سے مقبول انٹرٹینمنٹ
Advertisement

اگلی خبر