Advertisement
Advertisement
Advertisement
Advertisement

سگریٹ مارکیٹ اسسمنٹ 2024 نہیں کی، آئپسوس کا اعلان

Now Reading:

سگریٹ مارکیٹ اسسمنٹ 2024 نہیں کی، آئپسوس کا اعلان

عالمی شہرت تافتہ مارکیٹ ریسرچ اور کنسلٹنگ فرم آئپسوس نے پاکستان سگریٹ مارکیٹ اسسمنٹ 2024 کرنے کی تردید کر دی ہے۔

عالمی شہرت یافتہ مارکیٹ ریسرچ اور کنسلٹنگ فرم نے واضح طور پر اعلان کیا ہے انکی فرم نے آئپسوس پاکستان سگریٹ مارکیٹ اسسمنٹ 2024″ سے متعلق کوئی تحقیق نہیں کی ہے اور نہ ہی کوئی رپورٹ جاری کی ہے۔

مارکیٹ ریسرچ اور کنسلٹنگ فرم (آئی پی ایس او ایس) آئپسوس کا کہنا ہے کہ اس کا خیبر ٹوبیکو کمپنی لمیٹڈ کے خلاف الزامات سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق  پاکستان میں سگریٹ تیار کرنے والی ایک معروف کمپنی کے ٹی سی  نے   “پاکستان سگریٹ مارکیٹ اسیسمنٹ 2024” کے عنوان سے اپسوس کی رپورٹ میں پھیلائے گئے حالیہ ہتک آمیز الزامات کے جواب میں فالو اپ بیان جاری کرتے ہوئے قانونی نوٹس جاری کیا ہے۔جس کے جواب میں کے ٹی سی کو فرانس میں مقیم عالمی سطح پر تسلیم شدہ مارکیٹ ریسرچ اور کنسلٹنگ فرم Ipsos کی جانب سے اپنے قانونی نوٹس کا باضابطہ جواب موصول ہوا ہے۔ اور  Ipsos نے واضح طور پر اعلان کیا ہے کہ اس کا زیر بحث رپورٹ سے کوئی تعلق نہیں ہے، اس نے ایسی کوئی تحریر نہیں جاری کی، اور “پاکستان سگریٹ مارکیٹ اسسمنٹ 2024” سے متعلق کوئی تحقیق نہیں کی۔

  مزید برآں، Ipsos نے تصدیق کی ہے کہ KTC کے خلاف الزامات سے اس کا کوئی تعلق نہیں ہے۔مزید برآں، ASB Associates،  وہ فرم جو مبینہ طور پر اس رپورٹ کے اجراء سے منسلک تھی اس، نے باضابطہ طور پر Ipsos پاکستان اور کسی بھی متعلقہ سرگرمیوں سے خود کو الگ کر لیا ہے۔ یہ جوابات واضح طور پر اس بات کی نشاندہی کرتے ہیں کہ ہتک آمیز رپورٹ ایک بدنیتی پر مبنی مہم کا حصہ تھی جس کا مقصد KTC کی  کاروباری ساکھ اور کاروباری مفادات کو نقصان پہنچانا تھا ۔ اور بے بنیاد الزامات اور غیر مصدقہ دعووں سے بھری رپورٹ کو KTC کے کاروباری عومل اور ریگولیٹری معیارات کی تعمیل کے بارے میں عوام اور اسٹیک ہولڈرز کو گمراہ کرنے کے لیے ڈیزائن کیا گیا تھا۔

Advertisement

 IPSOS اے ایس بی ایسوسی ایٹ کی وضاحت یہ تصدیق کرتی ہے کہ  کہ رپورٹ نہ صرف غلط تھی بلکہ مکمل طور پر غیر مصدقہ بھی تھی اور اس میں کوئی معتبر بنیاد نہیں تھی۔    اسی طرح، Ipsos پاکستان سے ASB ایسوسی ایٹس کی باضابطہ علیحدگی رپورٹ کی جعلی نوعیت اور اس کے پیچھے موجود اداروں کو مزید بے نقاب کرتی ہے۔ اس کے علاوہ، رپورٹ کے پیچھے بدنیتی پر مبنی ارادے کو اس کے پھیلاؤ کے وقت اور انداز سے مزید اجاگر کیا گیا ہے۔  ان کوششوں کا مقصد واضح طور پر KTC کی ساکھ کو نقصان پہنچانا اور اس کے کاروباری امور میں خلل ڈالنا تھا۔

 شفافیت، ریگولیٹری تعمیل، اور اخلاقی کاروباری عوامل کے لیے KTC کی کاروباری ساکھ مبینہ  رپورٹ میں پھیلائی گئی جھوٹی باتوں کے بالکل برعکس ہے۔  عوامی سطح پر درج کمپنی کے طور پر مالیاتی گوشواروں اور آڈٹ شدہ اکاؤنٹس کے ساتھ عوامی جانچ پڑتال کے لیے، KTC نے  اعلیٰ ترین معیارات کو ہمیشہ برقرار رکھا ہے ۔اور  ریگولیٹری اتھارٹیز کے ساتھ فعال تعاون، بشمول فیڈرل بورڈ آف ریونیو (FBR)، اور پاکستان کے تمباکو کے سب سے بڑے برآمد کنندہ کے طور پر اپنے کردار کو قومی خزانے اور بڑے پیمانے پر معیشت میں تعاون کو یقینی بنایا ہے ۔ کے ٹی سی نے عوام اور اسٹیک ہولڈرز سے استدعا کی ہے کہ وہ غیر مصدقہ الزامات کو مسترد کریں اور KTC پر اپنی حمایت اور اعتماد کو جاری رکھیں کیونکہ ہم اپنے آپریشنز کے تمام پہلوؤں میں بہترین کارکردگی اور تعمیل کے اپنے عزم پر ثابت قدم ہیں

Advertisement
Advertisement
مزید پڑھیں

Catch all the Business News, Breaking News Event and Latest News Updates on The BOL News


Download The BOL News App to get the Daily News Update & Live News


Advertisement
آرٹیکل کا اختتام
مزید پڑھیں
نوازشریف مخصوص نشستوں پر عدالتی فیصلے سےناخوش، پارٹی رہنماؤں کا اجلاس بلا لیا
شوہرثانی کو ریلیف گڈ ٹو سی یو کا تسلسل دکھائی دیتا ہے، طلال چوہدری
فیصلے کے بعد الیکشن کمیشن کو استعفیٰ دے دینا چاہئے، حافظ نعیم الرحمان
ہم پریشان نہیں حیران ہیں، سپریم کورٹ سے ایسےفیصلے کیسے آرہے ہیں، ناصرشاہ
بانی پی ٹی آئی کو مجبور کرنے کیلئے کیسز بنائے گئے، بیرسٹر گوہر
کل کافیصلہ آئینی نہیں، سیاسی تھا، فیصلے کی ہوم ڈلیوری کی گئی، خواجہ آصف
Advertisement
توجہ کا مرکز میں پاکستان سے مقبول انٹرٹینمنٹ
Advertisement

اگلی خبر