Advertisement
Advertisement
Advertisement
Advertisement

قومی اسمبلی تحلیل کرنے کا معاملہ، اپوزیشن جماعتوں کا ہنگامی اجلاس طلب

Now Reading:

قومی اسمبلی تحلیل کرنے کا معاملہ، اپوزیشن جماعتوں کا ہنگامی اجلاس طلب

قومی اسمبلی اجلاس ملتوی کرنے اور اسمبلیاں تحلیل کرنے کے معاملے پر اپوزیشن جماعتوں نے ہنگامی اجلاس طلب کرلیا ہے۔

ذرائع کے مطابق اپوزیشن جماعتوں نے ہنگامی اجلاس رات کو طلب کیا ہے اور اجلاس کی صدارت اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کریں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں اپوزیشن جماعتیں قانونی نکات پر غور کرے گی۔

 ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ اپوزیشن جماعتیں سپریم کورٹ میں زیر سماعت کیس سے متعلق مشاورت کرے گی جبکہ اجلاس میں اپوزیشن جماعتوں کے سربراہان اہم فیصلے کریں گے۔

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ اجلاس میں آصف علی زرداری، مولانا فضل الرحمان، بلاول بھٹو زرداری، اختر مینگل، خالد مگسی شریک ہوں گے جبکہ اجلاس میں خالد مقبول صدیقی، شاہ زین بگٹی، مولانا اسعد محمود، سمیت دیگر شریک ہوں گے۔

Advertisement

یاد رہے کہ صدر مملکت نے قومی اسمبلی تحلیل کردی ہے اور کابینہ ٹوٹ گئی ہے تاہم آئین کے تحت وزیر اعظم عمران خان 15 روز کے لیے اپنے عہدے پر رہ سکتے ہیں۔

اس سے قبل آج ہی وزیرِ اعظم عمران خان نے صدرِ مملکت ڈاکٹر عارف علوی کو اسمبلیاں تحلیل کرنے کی تجویز بھیجی تھی۔

واضح رہے کہ اسپیکر قاسم سوری قومی اسمبلی نے وزیر اعظم کے خلاف تحریک عدم اعتماد کو آئین کے منافی قرار دے دیا۔

قاسم سوری کی سربراہی میں قومی اسمبلی کا اجلاس 40 منٹ کی تاخیر سے شروع ہوا تھا۔

ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری نے متحدہ اپوزیشن کی تحریکِ عدم اعتماد کو آئین کے خلاف قرار دیا۔

انہوں نے کہا کہ وزیرِ اعظم کے خلاف کسی غیر ملکی کو حق نہیں کہ وہ تحریکِ عدم اعتماد لائے، میں بطور ڈپٹی اسپیکر رولنگ دیتا ہوں کہ وزیرِ اعظم کے خلاف تحریکِ عدم اعتماد مسترد کی جاتی ہے۔

Advertisement

ڈپٹی اسپیکر نے تحریکِ عدم اعتماد پر ووٹنگ کرانے سے انکار کر دیا اور قومی اسمبلی کا اجلاس غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دیا۔

نگران وزیر اعظم کی تعیناتی کیسے ہوگی

قانونی ماہرین کے مطابق نگران وزیر اعظم کی تعیناتی آئین کے آرٹیکل 224اے کے تحت ہوگی۔

وزیراعظم اور قائد حزب اختلاف اسمبلی تحلیل ہونے کے تین روز میں نگراں وزیراعظم کے نام پر اتفاق کریں گے۔

وزیراعظم اور قائد حزب اختلاف میں اتفاق نہ ہونے پر اسپیکر قومی اسمبلی کمیٹی تشکیل دیں گے۔

کمیٹی 8ارکان پر مشتمل ہوگی جس میں حکومت اور اپوزیشن کے 4،4 ارکان شامل ہوں گے۔

Advertisement

کمیٹی تین روز میں نگران وزیراعظم کے نام پر اتفاق کرنے کی پابند ہو گی۔ کمیٹی بھئ اتفاق نہیں کر پاتی تو معاملہ الیکشن کمیشن کے سپرد ہو جائے گا۔

الیکشن کمیشن دو روز میں نگران وزیراعظم کا اعلان کرنے کے پابند ہوِں گے۔

Advertisement
Advertisement
مزید پڑھیں

Catch all the Business News, Breaking News Event and Latest News Updates on The BOL News


Download The BOL News App to get the Daily News Update & Live News


Advertisement
آرٹیکل کا اختتام
مزید پڑھیں
بنگلادیش میں پاکستانی طلباء کی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے پاکستانی ہائی کمیشن سرگرم
پنجاب اسمبلی کا اجلاس بلانے کے لئے ریکوزیشن جمع
بلاول بھٹو کا شہید شاہنواز بھٹو کو 39 ویں یومِ شہادت پر خراج عقیدت
حکومت نے فچ ریٹنگ کی رپورٹ کو مسترد کردیا
ٹرین میں سفر کرنے والوں کیلئے بُری خبر آگئی
جسٹس ریٹائرڈ مقبول باقرکی سپریم کورٹ کا ایڈہاک جج بننے سے معذرت
Advertisement
توجہ کا مرکز میں پاکستان سے مقبول انٹرٹینمنٹ
Advertisement

اگلی خبر