رواں دہائی کی کرکٹ ٹیم، کوئی پاکستانی کھلاڑی شامل نہیں

زاہد فاروق ملک رپورٹر

27th Dec, 2020. 07:54 pm

کرکٹ کی بین الاقوامی تنظیم (آئی سی سی) نے مختلف فارمیٹس میں دہائی کی کرکٹ ٹیمیں منتخب کی ہے تاہم ان ٹیموں میں کوئی پاکستانی شامل نہیں ہے۔

رواں دہائی کی کرکٹ ٹیم میں ٹی ٹونٹی فارمیٹ میں کئی عرصہ تک نمبر ون پوزیشن پر رہنے والی پاکستانی ٹیم کا کوئی کھلاڑی بھی جگہ نہ بنا سکا، بابر اعظم کو آئی سی سی کی نمبر ون ریکنگ پر رہنے کے باوجود ٹیم میں جگہ نہ مل سکی۔

آئی سی سی کی جانب سے اعلان کردہ ایک روزہ کرکٹ کی ٹیم آف دی ڈیکیڈ میں انڈیا کے تین کرکٹر جگہ بنانے میں کامیاب رہے ہیں جبکہ آسٹریلیا اور جنوبی افریقہ کے دو، دو کھلاڑیوں کو شامل کیا گیا ہے۔

سری لنکا، بنگلہ دیش، انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے ایک، ایک کھلاڑی دہائی کی ون ڈے ٹیم میں جگہ بنا سکے۔

ٹیم آف دی ڈیکیڈ کے لیے پاکستان کے مصباح الحق، سعید اجمل اور محمد حفیظ کو نامزد کیا گیا تھا مگر وہ پلئینگ الیون یعنی 11 کھلاڑیوں کی ٹیم میں جگہ نہ بنا سکے۔

آئی سی سی کی اعلان کردہ دہائی کی ٹیم میں کپتان سابق انڈین وکٹ کیپر ایم ایس دھونی ہیں جبکہ ان کے علاوہ وراٹ کوہلی اور روہت شرما بھی شامل ہیں۔

آسٹریلیا کے ڈیوڈ وارنر اور مچل سٹارک جبکہ جنوبی افریقہ کے اے بی ڈویلیئرز اور عمران طاہر بھی ٹیم آف دی ڈیکیڈ کا حصہ ہیں۔

بنگلہ دیش کے شکیب الحسن، سری لنکن بولر لیستھ ملنگا، نیوزی لینڈ کے ٹرینٹ بولٹ اور انگلینڈ کے بین سٹوکس بھی ون ڈے ٹیم میں شامل کیے گئے۔

آئی سی سی کی ٹیسٹ اور ٹی 20 ٹیمز آف دی ڈیکیڈ میں بھی کوئی پاکستانی کھلاڑی شامل نہیں کیا گیا۔

ٹیسٹ ٹیم کے کھلاڑیوں میں انگلینڈ کے چار اور انڈیا دو کھلاڑیوں کو لیا گیا ہے۔

ٹیسٹ ٹیم کے کھلاڑیوں میں الیسٹر کک، جیمز اینڈرسن، سٹورٹ براڈ، بین سٹوکس، ڈیوڈ وارنر، کین ولیمسن، وراٹ کوہلی، ایشون، ڈیل سٹن، سٹیو سمتھ اور کمار سنگاکارا کے نام ہیں۔

ٹی 20ٹیم آف دی ڈیکیڈ میں بھی انڈیا کے ایم ایس دھونی کو کپتان رکھا گیا ہے جبکہ ان کے ساتھ جسپرت بھمرا، وراٹ کوہلی، روہت شرما ٹیم کا حصہ ہیں۔

ٹیم میں افغانستان کے راشد خان نے بھی جگہ بنائی ہے، ان کے علاوہ کرس گیل، گلن میکسول، لیستھ ملنگا، ڈویلیئرز، پولارڈ اور فنچ بھی ٹیم میں شامل ہیں۔

Square Adsence 300X250