پاکستان کے حکمران قابل نفرت ہیں، مولانا فضل الرحمان


تنویر علی

26th November, 2020
مولانا فضل الرحمان
Square ad 300 x 250

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ پاکستان کے حکمران قابل نفرت ہیں۔

لاڑکانہ میں شہید اسلام کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ہماری ماؤں نے ہمیں غلام نہیں پیدا کیا، ہم اپنے افلاس کے سامنے شرمندہ نہیں ہونا چاہتے، پاکستان کو بڑی قوتوں نے اپنی کالونی سمجھا ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ قادیانی پاکستان کے آئین کو تسلیم اور نہ آئین کے فیصلے کو تسلیم کرتے ہیں، طاقتور سے طاقت ور اداروں کو کہتا ہوں کہ قادیانی کو دوبارہ مسلمان کہلوانے کے لیے ہماری لاشوں سے گزرنا پڑے گا، اس ملک میں ناموس رسالت اور ناموس صحابہ کو تحفظ حاصل نہیں، پاکستان کو خانہ جنگی کی جانب دھکیلا جا رہا ہے، تمام اختلاف کے باوجود ایک قوم کی طرح رہنا چاہتے ہیں، ہر چیز کی حدود ہوتی ہے جب دوسرے کی حدود میں داخل ہوں گے تو فساد تو ہوگا، حق حکمرانی عوام کی ہے تم ملازم ہو، جانتے ہیں کہ 18 ویں ترمیم کو ختم کرنے کی سازش ہو رہی ہے، موجودہ ناجائز حکومت 18 ویں ترمیم میں ردو بدل کا ایجنڈا لے کر آئی ہے۔

فضل الرحمان کا مزید کہنا تھا کہ سندھ کے جزائر ہیں ان وسائل پر سندھ کے بچوں کا حقوق ہے، کسی تالہ آزما کو قوم کے حقوق سے کھیلنے نہیں دیں گے، موجودہ حکومت دھناندلی سے ساتھ ایجنڈے کے تحت لائی گئی، معاشی طرح کمزور کر کے مالیاتی اداروں کے شکنجے میں پھنسایا جا رہا ہے، مہنگائی کہاں پہنچ گئی غریب راشن خریدنے کے قابل نہیں، مائیں بچوں کی بھوک برداشت نہ کر کے انہیں ذبح کر رہی ہیں، کیا پاکستان اس لیے دیکھا تھا، کس منہ سے انصاف کی بات کرتے ہو، تمہارے چہرے ظلم کی وجہ سے بھیانک ہو چکے ہیں۔