اسرائیل کالیرزبیم میزائل سسٹم سےڈرون گرانےکاکامیاب تجربہ


رومیصہ ملکویب ایڈیٹر

14th February, 2020
رافیل کمپنی

اسرائیل نےپہلی بارلیرز بیم میزائل سسٹم کی مدد سےبغیر پائلٹ ڈرون طیاروں کومارگرانے 100 فی صد کامیاب تجربہ کیا ہے۔

غیر ملکی  خبررساں  ادارے کی رپورٹ کےمطابق اسرائیلی دفاعی سامان بنانے والی کمپنی رافیل نےایک نہایت مؤثرنظام بنایاہے جو ایک وقت میں لیزرکےذریعے کئی ڈرون دورانِ پروازتباہ کرسکتاہے۔اسےامن اورجنگ، دونوں حالات میں کامیابی سےاستعمال کیا جاسکتا ہے۔

کمپنی نےمطابق اس سسٹم کانام ’ڈرون ڈوم سی یواے ایس رکھا گیا ہےجوہرطرح کی صورتحال میں 100 فیصد کامیاب ثابت ہوا ہے جو عسکری اور شہری علاقوں کو ڈرون اور دیگر بڑے یو اے وی سے محفوظ بناسکتا ہے۔

کمپنی کامزیدکہناتھاکہاس نظام کی خاصیت یہ ہے کہ اس سے تیزی سےاڑتے ہوئے بہت چھوٹے ڈرون کو بھی تباہ کرسکتا ہے جو عموماً اپنی جسامت کے وجہ سےٹارگٹ سےنکل جاتے ہیں۔

رافیل کمپنی نے حال میں کئے گئے بعض ٹیسٹ کی تفصیلات اور ویڈیو جاری کی ہے۔

 واضح  رہے کہ رواں سال جنوری میں اسرائیل کے ایک ریٹائرڈ فوجی افسر نے اسرائیلی پریس کو بتایا تھا کہ تل ابیب گزشتہ تین دہائیوں سے لیزر میزائل نظام پر کام کررہا ہے جو ابر آلود اور ریتلے طوفان کے موسم میں بھی اپنے ہدف کو نشانہ بنا سکے۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ سسٹم بادلوں اور گردو غبار کے طوفان میں ہدف کو نشانہ بنانے کی صلاحیت نہیں‌رکھتا۔

ایک سوال کےجواب میں جنرل یسرائیل کا کہنا تھا کہ لیزر سسٹم روایتی میزائل کی نسبت بہت سستا ہونے کے ساتھ اپنے ہدف کو زیادہ بہتراورجلد از جلد نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

واضح رہے کہ رافیل کمپنی چھ عدد سسٹم برطانوی فوج کوفروخت کرنے کامعاہدہ بھی کرچکی ہے۔