ڈالر کی قیمت میں زبردست کمی

وریشہ مسعودویب ایڈیٹر

16th Sep, 2021. 05:15 pm
ڈالر کی قیمت

انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت میں کاروباری ہفتے کے چوتھے روز کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق انٹربینک میں ڈالر کی قدر میں 94 پیسے  کی کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

فاریکس ڈیلرز کے مطابق انٹربینک میں ڈالر 169.12 سے کم ہو کر 168.18 روپے پر بند ہوا ہے جبکہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر کا بھاؤ 90 پیسے کمی سے 168 روپے 70 پیسے ہے۔

کرنسی ڈیلر ظفر پراچہ نے بتایا کہ اسٹیٹ بینک کی مداخلت کی وجہ سے دو دن سے ڈالر نیچے آرہا ہے اور امید ہے کہ آنے والے دنوں میں روپے کی قدر مزید بہتر ہوگی۔

واضح رہے گزشتہ روز ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری ظفر پراچہ نے کہا تھا کہ درآمد کنندگان کی جانب سے ڈالر کی خریداری بڑھنے اور افغانستان میں ڈالر کی اسمگلنگ کی وجہ سے مقامی سطح پر ڈالر کی قیمت بڑھ رہی ہے۔

ظفر پراچہ نے کہا تھا کہ ایکس چینج کمپنیز نے درآمدات پر کیش مارجن کی شرط عائد کرنے کی تجویز دی تھی جس کے تناظر میں بینکوں کو مرکزی بینک نے پابند کیا ہے کہ وہ بلاضرورت زائد ایل سی نہ کھولیں جس کے بعد بینکوں نے ایل سی کھولنا کم کی ہیں جس کے اثرات نے روپے کو وقتی طور پر بحال کیا ہے۔

ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری ظفر پراچہ نے واضح کیا تھا کہ کئی سالوں بعد ڈالر کی بلیک مارکیٹ دوبارہ شروع ہوگئی ہے اور بلیک مارکیٹ میں ڈالر، اوپن مارکیٹ کے مقابلے میں 3 روپے اوپر میں فروخت ہو رہا ہے۔

علاوہ ازیں اپنے ایک بیان میں گورنراسٹیٹ بینک رضا باقر کا کہنا تھا کہ ڈالر کی قدر میں اضافہ قدرتی بات ہے کیوں کہ مالی سال 2022 میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھ کر جی ڈی پی کے 2 سے 3 فیصد تک پہنچنے کی توقع ہے۔

گورنراسٹیٹ بینک رضا باقر کا مزید کہنا تھا کہ اگر بڑھتے ہوئے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کے باوجود ایکسچینج ریٹ نہیں بڑھا تو اس کا مطلب ہے کہ ایکسچینج ریٹ کو برقرار رکھا جارہا ہے، جو مصنوعی اور ملکی معیشت کے لیے خطرناک ہے۔

Adsence 300X250