پی ایس ایل 6، مقامی کرکٹرز کی کیٹگری کی تجدید کردی گئی

زاہد فاروق ملک رپورٹر

24th Dec, 2020. 05:02 pm

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے چھٹے سیزن کے لیے  مقامی کھلاڑیوں کی کیٹگری کی  تجدید کردی گئی۔

تفصیلات کے مطابق  پاکستان سپرلیگ  کے چھٹے سیزن  کے لیے مقامی کھلاڑیوں کی کیٹگری کی  تجدید کرتے ہوئے کرکٹرز کے ٹرانسفر اور اسکواڈ میں برقرار رکھنے کی  راہ کھول دی گئی۔

‏ پاکستان کے کپتان بابر اعظم 12 میچز میں 473 رنز بنا کر   حال ہی میں ختم ہونے والی ایس ایل 2020ء کے بہترین کھلاڑی قرار پائے وہ کراچی کنگز میں اپنے ساتھیوں  عماد وسیم اور  محمد عامر کے ساتھ پلاٹینم کیٹگری میں ہیں ۔

‏ اسلام آباد یونائیٹڈ  کے کپتان شاداب  خان پلاٹینم کیٹگری میں ہی شامل ہیں جبکہ ان کے ساتھی  فہیم اشرف پی ایس ایل 2021کے لیے ڈائمنڈ کیٹگری میں چلے گئے ہیں ۔

‏ پشاور زلمی کے تین کھلاڑی وہاب ریاض ، کامران اکمل اور  شعیب ملک کو پلاٹینم کیٹگری میں رکھا گیا ہے جبکہ فاسٹ بولر حسن علی ڈائمنڈ کیٹگری میں چلے گئے ہیں ۔

‏ ملتان سلطان کے کپتان شان مسعود پی ایس ایل 2020  اور نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں متاثر کن پرفارمنس کے بعد ڈائمنڈ  کیٹگری میں آگئے  ہیں ۔  شان مسعود کے ساتھی شاہد آفریدی  اور سہیل تنویر   بھی پلاٹینم کیٹگری میں ہیں ۔

‏کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے کپتان سرفراز احمد پلاٹینم کیٹگری میں ہیں جبکہ فاسٹ بولر محمد حسنین گولڈ سے ڈائمنڈ میں آ گئے ہیں ۔ وہ پی ایس ایل 2020 میں 15 وکٹوں کے ساتھ کوئٹہ  گلیڈی ایٹرز کے سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے بولر رہے ۔

‏فخر زمان پلاٹینم کیٹگری میں موجود ہیں ۔وہ لاہور قلندرز کی جانب سے پی ایس ایل 2020 میں 12 میچوں  میں 325 رنز بنا کر دوسرے  زیادہ سے زیادہ رنز بنانے والے بیٹسمین بنے تھے ۔

ان کے ساتھی محمد حفیظ اور پی ایس ایل 2020 کے سب سے زیادہ وکٹیں لینے والے بولر شاہین شاہ آفریدی بھی پلاٹینم کیٹگری میں شامل  ہیں ۔

لاہور  قلندرز کے فاسٹ بولر حارث روف کی کامیابیوں کا سفر جاری ہے وہ گولڈ سے ڈائمنڈ  کیٹگری میں شامل ہو گئے ہیں ۔انہوں نےسال 2020میں 19.57کی اوسط کے ساتھ سب سے زیادہ 57وکٹیں حاصل کی ہیں۔

کیٹگری رینیو کے عمل اور پک آرڈر کو حتمی شکل دیئے جانے کے بعد اب ٹرانسفر اوربرقرار رکھنے کی راہ باضابطہ  طور پر کھل گئی ہے ۔

وہ تمام کھلاڑی  جنہوں نے پاکستان کی کسی بھی فارمیٹ میں نمائندگی کی ہے ان کو گولڈ کیٹگری دی گئی ہے۔

انڈڑ 23 کا کھلاڑی ایمرجنگ پلئیر کے اسکوڈ میں دو سال سے زائد عرصے کے لیے نہیں آسکتا  شرط ہے کہ ان دو سالوں میں وہ تین یا اس سے کم میچ کھیلا ہو۔

تمام ٹیمیں اب اپنے ری ٹین کیے جانے والے کھلاڑیوں کو حتمی شکل دینے سے پہلے کھلاڑیوں کو ریلیگیٹ کرنے کی درخواستیں جمع کرواسکتی ہیں۔

جب کہیں سے بھی ریلیگیٹ کرنے کی درخواست کی جائے گی تو پھر باقی ٹیموں کو اس کھلاڑی کو اس کی بیس کیٹگری میں پک کرنے کے اجازت ہوگی، اگر کوئی دوسری ٹیم مذکورہ کھلاڑی کو اس کی بیس کیٹگری میں پک نہیں کرتی تو پھر اس کھلاڑی کو نچلی کیٹگری میں بھیج دیا جائے گا۔

ایسے تمام مقامی کھلاڑی جو پی ایس ایل 2020 کا حصہ نہیں رہے ان کی لسٹ علیحدہ سے جاری کی جائے گی۔

Square Adsence 300X250